Top 100 Best Urdu Two Line Sad & Love Shayari 2016

Top 100 Best Urdu Two Line Sad Shayari 2016, 2 line sad shayari in urdu, urdu sad shayari with images, urdu sad shayari in hindi, urdu sad shayari blog, urdu sad shayari hd wallpaper. sad love shayari urdu, sad urdu shayari on life, 2 lines urdu shayari facebook, heart touching urdu shayari for boyfriend, broken heart urdu long shayari, dard bhari urdu shayari collection, very painful urdu shayari, best or leatest new urdu shayari collection…

sad-alone-girl-lonely-cute-sadness

دل کے سنسان جزیروں کی خبر لائے گا~~~~~~!!
درد پہلو سے جدا ہو کے کہاں جائے گا~~~~~~!!
کون ہوتا ہے کسی کا شبِ تنہائی میں~~~~~~!!
غمِ فرقت ہی غمِ عشق کو بہلائے گا~~~~~~!!
چاند کے پہلو میں دم سادھ کے روتی ہے کرن~~!!
آج تاروں فُسوں خاک نظر آئے گا~~~~~~~!!
راکھ میں آگ بھی ہے غمِ محرومی کی_________!!
راکھ ہو کر بھی یہ شعلہ ہمیں سلگائے گا________!!
وقت خاموش ہے رُوٹھے ہوئے یاروں کی طرح__!!
کون لو دیتے ہوئے زخموں کو سہلائے گا_______!!
دھوپ کو دیکھ کے اس جسم پہ پڑتی ہے چمک
چھاؤں دیکھیں گے تو اس زلف کا دھیان آئے گا
زندگی چل کہ زرا موت کا دم خم دیکھیں___!!
ورنہ یہ جذبہ لحد تک ہمیں لے جائے گا_____!!


شب بھر کرن کرن کو ترسنے سے فائدہ¤
ہے تیرگی تو آگ لگا دیجئے مجھے __¤


کبھی کبھی ڈھیروں لفظوں کے ہوتے ہوۓ بھی،
کچھ بھی بولنے کو دل نہیں چاہتا.~~~~~~~!!
نہ کچھ بتانے کےلیے نہ جتانےکے لیے،~~~!!
اور نہ ہی ہمدردی کے لیے~~~~~~~~~~~!!


عمر لگ گئ ساری گھر کو گھر بنانے میں
تنکا تنکا چن کے اک گھونسلہ بنانے میں
رائیگاں گئ کوشش زندگی نبھانے کی
راج ہے اداسی کا دل کے کار خانے میں
دوریاں بڑھانے کو اک لمحہ ہی کافی ہے
جبکہ وقت لگتا ہے قربتیں بڑھانے میں
سوچنا تھا تجھ کو یہ بات کرنے سے پہلے
بات پھیل جاتی ہے بات لب پہ آنے میں
فتنہ خیز دنیا میں ظلم کا اندھیرا ہے
جان دینی پڑتی ہے اک دیا جلانے میں
دل کی ساری باتیں ہم اسلیئے نہ کہہ پائے
وقت بیت جائے نہ زخم دل دکھانے میں


کبھی کبھی وہ نبھانے کی بات کرتا ھے
وہ بگڑی بات بنانے کی بات کرتا ھے
وہ مجھ سے یہ نہیں کہتا کہ جاو مر جاو
وہ مجھ کو چھوڑ کر جانے کی بات کرتا ھے
میں دنیاداری میں آنسو چھپائے پھرتا ہوں
وہ سب کے سامنے کوئی رولانے کی بات کرتا ھے_
میں روٹھ جاوں تو پھر خود ہی مان جاتا ہوں
وہ انا پرست مجھے کب منانے کی بات کرتا ھے_
میرے قریب ھے لیکن میرا نہیں ھے وہ
وہ میرے ساتھ زمانے کی بات کرتا ھے
عجیب دل ھے میرا صبر ہی نہیں کرتا
ٹوٹ جائے تو شور مچانے کی بات کرتا ھے __


نیند آتی نہیں
دن گزرتا نہیں
شام ڈھلتی نہیں
رات کٹتی نہیں
وقت کی دوپہر خواب بنتی نہیں
بے کلی سوچ کے پھول چنتی نہیں
شعر ہوتا نہیں
درد سوتا نہیں
ضبط کا امتحاں ختم ہوتا نہیں
اس کو سوچے بنا دل بہلتا نہیں
سانس چلتی نہیں
کتنا دشوار دشت انا کا سفر
اور پاؤں بھی وہ جو سنبھلتے نہیں
رات پڑجائے تو دن نکلتا نہیں
کوئی لہجہ مقدر بدلتا نہیں
جسم ٹوٹے بنا دم نکلتا نہیں


کہاں تک مسلسل رخ بدلتے جائیں گے کشتی کا
جہاں ساحل سمجھتے ھیں وہیں طوفان ابھرتا ھے ____!!


بہت مضطر، بہت درد آشنا دل
عجب آفت کا ٹکڑا ہے مرا دل
وفا کیا اور وفا کا تذکرہ کیا
تمہارے سامنے جب رکھ دیا دل
یہ دل میں تُو نے پیکاں رکھ دیا ہے
کہ دل میں رکھ دیا اِک دوسرا دل
ہم اپنے دل کی حالت سن کے روئے
ہمارا حال سن کر رو دیا دل
یہ بجلی ہے کہ شعلہ ہے کہ سیماب
مرے آغوش میں ہے کیا بلا دل
ہر اِک سے ہے وفا کی تم کو امّید
ہر اِک دل کو سمجھتے ہو مرا دل
اسے جنبش نہیں ہوتی فغاں سے
خدا نے کیا بنایا ہے ترا دل
تبسّم ہے عجب واژونیِ بخت
میں ہنستا ہوں تو روتا ہے مرا دل


ﻣﯿﺮﯼ ﺁﻧﮑﮭﻮﮞ ﮐﮧ ﺩﺍﻡ ﭘﻮﺭﮮ ﺩﻭ …..
ﻣﯿﮟ ﻧﮯ ﺧﻮﺍﺑﻮﮞ ﺳﻤﯿﺖ ﺑﯿﭽﯽ ﮬﯿﮟ….


بہت سے عام لوگوں میں
بہت ہی عام سے ہیں ہم
کہ بالکل شام سے ہیں ہم
کہ جیسے شام ہوتی ہے
بہت چپ چاپ اور خاموش
بہت ہی پر سکوں لیکن
کسی پہ مہرباں جیسے
مگر بے چین ہوتی ہے
کوئی ہو رازداں جیسے
خفا صبح کی کرنوں سے
کہ جیسے شام ہوتی ہے
یوں بالکل شام سے ہیں ہم
بہت ہی عام سے ہیں ہم
مگر ان عام لوگوں میں
دل حساس رکھتے ہیں
بہت کچھ خاص رکھتے ہیں
اگرچہ عام سے ہیں ہم…..


ﺻﺪﺍﺋﯿﮟ ﮐﻮﻥ ﺳﻨﺘﺎ ﮨﮯ
ﺩﻻﺳﮯ ﮐﻮﻥ ﺩﯾﺘﺎ ﮨﮯ
ﺗﮭﮑﺎ ﭨﻮﭨﺎ ﻭﺟﻮﺩ ﺍﭘﻨﺎ
ﮨﺰﺍﺭﻭﮞ ﺩﺭﺩ ﺳﮩﮧ ﮐﮯ ﺑﮭﯽ
ﭼﭩﺎﻧﻮﮞ ﮐﯽ ﻃﺮﺡ ﻗﺎﺋﻢ
ﯾﻮﻧﮩﯽ ﺭﮐﮭﻨﺎ ﮨﯽ ﭘﮍﺗﺎ ﮨﮯ
ﯾﮩﺎﮞ ﺳﺐ ﻟﻮﮒ ﺳﺎﺗﮭﯽ ﮨﯿﮟ
ﻓﻘﻂ ﺑﺲ ﻣﺴﮑﺮﺍﮨﭧ ﮐﮯ
ﺟﻮ ﺩﻭ ﺁﻧﺴﻮ ﺑﮩﺎﮈﺍﻟﻮ
ﺗﻮ ﺩﺍﻣﻦ ﺟﮭﺎﮌ ﺩﯾﺘﮯ ﮨﯿﮟ
ﯾﻮﮞ ﺗﻨﮩﺎ ﭼﮭﻮﮌ ﺩﯾﺘﮯ ﮨﯿﮟ
ﮐﮧ ﭘﮭﺮ ﻟﺐ ﺳﯿﯿﮯ ﺍﻧﺴﺎﮞ
ﺳﺒﮭﯽ ﺷﮑﻮﮮ ﺳﺒﮭﯽ ﺑﺎﺗﯿﮟ
ﺩﻟﻮﮞ ﻣﯿﮟ ﺩﻓﻦ ﮐﺮ ﮐﮯ ﺑﺲ
ﺩﮐﮫ ﺳﮯ ﻣﺴﮑﺮﺍﺗﮯ ﮨﯿﮟ
ﯾﮩﯽ ﺩﺳﺘﻮﺭ ﺩﻧﯿﺎ ﮨﮯ ….!


اے چاند کی کرنوں !!!جاو نا
تم اس کو چھو کر آؤ ناا
وہ کب کب کیا کیا کرتی ھے ؟
وہ جاگتی ھے یا سوتی ھے؟
وہ کس سے کیا کیا کہتی ھے ؟
وہ شام کو کیسی لگتی ھے؟
جب سوئے تو کیسی دکھتی ھے ؟
جب جاگتی ھے تب کیسی لگتی ھے؟
تم چپکے سے جاؤ ناا
تم اس کو چھو کر آؤ نا!!!!!!
ھم اس کے بنا ادھورے ھیں
اور جینا مشکل لگتا ھے
تم کان مین اسکے کہدینا,
کویئ یاد اسے بہت کرتا ھے…..
اے چاند کی کرنوں !!!جاو ناا
تم اس کو چھو کر آؤ ناا ….!!


چلو کہ صبر کی ساری حدوں کو چھو آئیں
چلو کہ دُکھ کی کوئی انتہا تلاش کریں…!!


تجھ کو خوابوں میں دیکھنے والے
کتنی مشکل سے جاگتے هوں گے..


مجھے خودغرض کہتے ھو ________________تو بالکل ٹھیک کہتے ھو!
کہ جس کی غرض ہی تم ھو __________ وہ پھر خود غرض کیوں نہ ھو


کچھ خاص لوگو ں کی بے رخی ذات کو اندر تک ریزہ ریزہ کر دیتی ہے _!


تنہا لوگ اکثر سب سے زیادہ رحمدل ہوتے ہیں ،
اداس لوگوں کی مسکراہٹ سب سے زیادہ خوبصورت ہوتی ہے ،
صدموں سے ٹوٹے لوگ سب سے زیادہ عقلمند ہوتے ہیں ۔۔۔
یہ سب اس لیئے کیونکہ جس تکلیف سے وہ گزرے ، کسی اور کو سہتا نہیں دیکھنا چاہتے..


چلے گئے تو پُکارے گی ہر صدا ہم کو,,,,,,,,
نہ جانے کتنی زبانوں میں ہم بیاں ہونگے,,,,,,


مجھے منظور ہے گر” ترک تعلق” ہے رضا تيری
مگر ٹوٹے گا رشتہ درد کا آہستہ آہستہ …….!!


مثلِ ابر ہے چاہت میری…
ممکن ہی نہیں جگہ جگہ برسنا..


ترسیں گے پھر یہ لوگ ______ میرے شور کو
چڑیوں کی طرح میں بھی شجر چھوڑ جاؤں ﮔﺍ ____!!


ان لکیروں میں تو نہیں تو
کتنی ویران یہ ہتھیلی ہے ____!


تیری راہ میں پھر آنے کو
تیری راہ میں بکھر جانے کو
تیرے لیے سجنے کو
تیرے لیے سنورنے کو
تیرا اک لفظ محبت پر لٹ جانے کو
میرا اک لفظ ہاں کہہ کر مٹ جانے کو
سنو اب میرا دل نہیں کرتا
تیرا مجھے ملنے بلا آنے کو
میرا تجھے ملنے چلے آنے کو
میرا مہندی لگا کر تجھے دکھانے کو
تیرا میرے ہاتھ چوم کر رنگ حنا بڑھانے کو
سنو ! بے وفا صنم
میرا اب دل نہیں کرتا
بار بار تیرا گیت گانے کو
بار بار میرا گیت گنگانے کو
اب میرا دل نہیں کرتا
ادھورے خواب سجانے کو
آنکھ کھلنے پر سراب ھو جانے کو
میری ہتھلی پر تیرا نام لکھنے کو
بار بار اسے دیکھ کر لکیروں سے الجھ جانے کو
نگاہوں میں وہ ہی پیار کا کاجل لگانے کو
تنہائی میں نگاہیں وحشی بادل بنانے کو
سنو میرا دل نہیں کرتا
تجھے جان کہنے کو
تیرا مہمان ہو جانے کو
میرا دل نہیں کرتا


ﮐﻮﺋﯽ ﻣﻼ ﮨﯽ ﻧﮩﯿﮟ ___
ﺟﺲ ﮐﻮ ﺳﻮﻧﭙﺘﮯ ﻣﺤﺴﻦ !!!___
ﮬﻢ ﺍﭘﻨﮯ ﺧﻮﺍﺏ ﮐﯽ ﺧﻮﺷﺒﻮ !!!___
ﺧﯿﺎﻝ ﮐﺎ ﻣﻮﺳﻢ !!.


چلو اِک اور دنیا میں
تمہارے ساتھ چلتے ہیں
جہاں حالات کچھ بھی ہوں
مگر ہم ساتھ رہتے ہوں
جہاں موسم کوئی بھی ہو
جدائی کا نہ ہو لیکن
جہاں چاند بھی تم ہو
جہاں سورج ہوا روشنی
خوشبوؤں کا رنگ تم سے ہو
جہاں پر دل دھڑکنے کا
ہر اک احساس تم سے ہو
جہاں پر میرے جینے کی
ساری آس تم سے ہو . . !!


دل لگی دل کی لگی بن جائے گی
ہنسی ہنسی میں تیری آنکھ بھر آئے گی
تجھے خبر ہی نہیں کہ اک دن یہ محبت
بن کے آگ تیر ا تن و من جلائے گی
تو پکارے گا بھی تو نہ سنے گا کوئی
تیری ہر صدا بس صدا بن کر رہ جائے گی
یادِ محبوب رکھے گی بے چین و بے قرار
محبت میں جدائی ہر پل تجھے تڑپائے گی
عشق و وفا کو اک کھیل سمجھنے والے
چوٹ دل پر لگے گی تب سمجھ آئے گی
یہ چاہت جسے تو سمجھتا ہے وقت گزاری
طوفان بن کر تیرے اندر تباہی مچائے گی
تو بھولنا چا ہے بھی تو نہ بھلا پائے گا کبھی
محبت میں گذری ہر گھڑ ی تیرا چین چرائے گی


آ دیکھ ‘ مِری آنکھوں میں اک بار’ مِرے یار !
روشن ہیں کسی ہجر کے آثار ‘ مرے یار !
لے جا ۔۔ تُو رفاقت کے یہ پَل ‘ وصل کا جنگل
رہنے دے یہاں ہجر کے آزار ‘ مرے یار !
مِل جائے جو مجھ ایسا کوئی مجھ کو ‘ بہت ہے
جُز اِس کے نہیں کچھ مجھے دَرکار ‘ مرے یار !
اے قیس ! یہ کیا نَجد کی وَحشت کا اثر ہے؟
اب خواب میں آتا ہے چمن زار’ مِرے یار !
لمحاتِ جُدائی ‘ ‘ یہ دعائیں’ یہ اُداسی
کیؤں ہاتھ چُھڑانے کو ہے تیّار ؟ مِرے یار !


محبت،
تیرا احترام تو بہت ہے،
مگر خوبصورت دشمن کی طرح …


کیسے کیسے خواب دیکھے دربدر کیسے ہوئے
کیا بتائیں روز و شب اپنے بسر کیسے ہوئے
حادثے ہوتے ہی رہتے ہیں مگر یہ حادثے
ایک ذرا سی زندگی میں اِس قدر کیسے ہوئے۔۔۔!!


جس نے میری جذبوں کی صداقت کو نہ جانا۔۔۔!!
اب میری رفاقت کو ترستا…. بھی وہی ہے……!!


سنا ہے اس کے اشکوں سے بجھی ھے .پیاس صحرا کی!
جو کہتا تھا پتھر ھوں، ______ مجھے رونا نہیں آتا. . . . . !!


ﺗﻮ ﻧﮯ ﺍﮮ ﻋﺸﻖ ﯾﮧ ﺳﻮﭼﺎ ﮐﮧ ﺗﯿﺮﺍ ﮐﯿﺎ ﮨﻮ ﮔﺎ___!!
ﻣﯿﮟ ﺗﯿﺮﮮ ﺳﺮ ﺳﮯ ﺍﮔﺮ ﮨﺎﺗﮫ ﺍﭨﮭﺎ ﻟﯿﺘﺎ ﮨﻮﮞ ___!!


ﻣﯿﺮﯼ ﻣﻮﺕ ﺑﻬﯽ ﮐﯿﺎ ﻣﻮﺕ ﮨﻮ ﮔﯽ ______!!
ﯾﻮﻧﮩﯽ ﻣﺮ ﺟﺎﻭﮞ ﮔﺎ ﺗﻢ ﭘﮧ ﻣﺮﺗﮯ ﻣﺮتے ___!!


تیری نظروں سے پگھل جاتا ہوں___!!
لوگ کہتے ہیں آفتاب ہوں میں_____!!


♡آنکھیں تلاش کرتی ہیں……من چاہا انسان کبھی کبھی♡


ﺍﻧﺪﮬﮯ ﻧﮯ ﺍﭘﻨﮯ ﮨﺎﺗﮫ ﭘﮧ ﺁﻧﮑﮭﯿﮟ ﺍﮔﺎﺋﯽ ﮨﯿﮟ
ﭼُﮭﻮﻧﮯ ﮐﯽ ﺩﯾﺮ ﮨﮯ ﺗﻤﮩﯿﮟ ﭘﮩﭽﺎﻥ ﺟﺎﺋﮯ ﮔﺎ ____!!


آھستہ آھستہ
تم سےاب” مری جان میں
خود کو چھین لوں گا


ﻣﺠﺖ ﻻﺯﻣﯽ ﮨﮯ, ﻣﺎﻧﺘﺍ ﮨﻮﮞ،
ﻣﮕﺮ ﮨﻤﺰﺍﺩ !! ﺍﺏ ﻣﯿﮟ, ﺗﮭﮏ گیا ﮨﻮﮞ .
ﺗﻤﮩﺎﺭﺍ ﮨﺠﺮ ﮐﺎﻧﺪﮬﮯ ﭘﺮ ﺭﮐﮭﺎ ﮨﮯ،
ﻧﺎﺟﺎﻧﮯ ﮐﺲ ﺟﮕﮧ ﻣﯿﮟ ﺟﺎ ﺭﻫﺎ ﮨﻮﮞ .
ﻣﯿﺮﯼ ﭘﮩﻠﯽ ﮐﻤﺎﺋﯽ ﮨﮯ ﻣﺤﺒﺖ،
ﻣﺤﺒﺖ ﺟﻮ ﺗﻤﮩﯿﮟ ﻣﯿﮟﺩﮮ ﭼﮑﺎ ﮨﻮﮞ.
ﻣﯿﺮﮮ ﭼﺎﺭﻭﮞ ﻃﺮﻑ ﺍﮎ ﺷﻮﺭ ﺳﺎ ﮨﮯ،
ﻣﮕﺮ ﭘﮭﺮ ﺑﮭﯽ ﯾﮩﺎﮞﺗﻨﮩﺎ ﮐﮭﮍﺎ ﮨﻮﮞ.
ﻣﺤﺒﺖ, ﮨﺠﺮ , ﻧﻔﺮﺕ, ﻣﻞ ﭼﮑﯽ ﮨﮯ،
ﻣﯿﮟ ﺗﻘﺮﯾﺒﺎ ﻣﮑﻤﻞ ﮨﻮ ﭼﮑﺎ ﮨﻮﮞ…


بھیک كے اجالوں میں . . .
روشنی نہیں ہوتی . . . . !


ہجوم کشمکش میں آدمی گھبرا ہی جاتا ہے
پڑے مشکل تو جینے کا سلیقہ آہی جاتا ہے
اگر کا بیج بونے سے شجر شک کا ہی اگتا ہے
محبت کے ثمر سے پیشتر مرجھا ہی جاتا ہے
کبھی آنکھوں سے رستا ہے یہ زخم دل لہو بنکر
کبھی یہ خوف بنکر روح کو دہلا ہی جاتا ہے
شب تنہائ میں سجتی ہیں دل کی محفلیں اکثر
کوئ بھولا ہوا یادوں میں اپنی چھا ہی جاتا ہے
وہ مجھ کو ایسے چھوتا ہے کہ میں گلنار ہوتا ہوں
کبھی یوں ہی میرے جذبات وہ دہکا بھی جاتا ہے
یہاں چہرے سجا کے رکھے ہیں ہر ایک چہرے نے
فریب زندگی انسان اکثر کھا ہی جاتا ہے………..!!


ہم نے دل کی کتاب میں ترے ____
سارے وعدے سنبھال کر رکھے ہیں!


میرا مکمل ھونا تو ناممکن ٹھہرا ھی سہی
میری تو یادیں بھی ادھوری ھے تیرے بغیر____!!


اتنا سا وقت دو کہ سنبھل جائیں ہم زرا
تم کو ہے پھر اجازت بھلے دامن چھڑا لینا ___!!


تو اگر سن نہیں پایا تو مجھے غور سے دیکھ
بات ایسی ہے …… کہ دہرائ نہیں جائے گی ____!!


م کہاں ہو……….. میرے قریب آؤ
میں کہاں ہوں… مجھے پتا تو چلے ____!!


ہمیں تنہائیوں کا استعارہ مار ڈالے گا….!!
اسے میرا___!!
مجھے اس کا خسارہ مار ڈالے گا……….!!


اگر وہ لوٹ کے آتا تو پھر غضب ہوتا
مگر یہ پہلے ہوا ہے کبھی جو اب ہوتا..!!


ہم تمھیں اپنی خبر دیں بھی تو کیا سوچ کے دیں
ہم کو رہنا ہی نہیں تم کو خبر ہونے تک ______!!


کہاں ھے زِندگی اب زِندگی میں
فقط اِک نبض چلتی جا رھی ھے
مسلسل بھاپ بن کر اُڑ رھا ھُوں
مسلسل آگ جلتی جا رھی ھے


مرے مزار پہ آکے دئیے جلائے گا….!!
وہ میرے بعد ، میری زندگی میں آئے گا….!!


اس نے منزل کو بے نشاں رکھ کر
میرے قدموں کو راستہ بھیجا ….!!


ستم گروں کا کوئ قافلہ لگے ہے مجھے
ہجوم شہر ہی اب آئینہ لگے ہے مجھے
بکھر گیا ہے کچھ اسطرح زندگی کا وجود
سفر حیات کا سارا سزا لگے ہے مجھے
ہر ایک شخص یہاں سنگ آشنا ہے ملا
ہر ایک شخص کوئ سانحہ لگے ہے مجھے
نظر اٹھاؤں تو ہر سمت ایک وحشت ہے
ہر ایک جسم میں محشر بپا لگے ہے مجھے
ہر ایک شخص کا چہرہ بجھا ہوا ہے یہاں
تمام شہر ہی خود سے خفا لگے ہے مجھے
جھلس گئ ہوں میں یوں خواہشوں کے صحرا میں
کہ بددعا دے کوئ تو دعا لگے ہے مجھے
نہ سمجھی بات کا مفہوم میں کسی کا کبھی
ہر ایک لفظ ہی نا آشنا لگے ہے مجھے


ھر سے لہو میں لال ہوئی آج دھرتی
پہر سے اجڑی ہیں آج ماؤں کی گودیں
پہر سے بچھڑی ہیں آج بچوں سے مائیں
پہر سے ہوئے شہید آج بچے معصوم۔۔
پہر سے آج اجڑے ہیں کئی گھر
یا الہی کیا قیامت بپا هو رہی ھے
یہ کیسے مسلمان ہیں اک دوسرے کا لہو بہا رہے ہیں
الہی معاف کردے ھمیں
ان آفتوں سے بچا لے ہمیں
آمین یارب العالمین


اس سے بڑھ کر خوشی نہیں کوئی
____مل کر رونا نصیب ہو ہم کو____!!


یوں تو لا حاصل رہا بہت کچھ
پر سر فہرست رہی، کمی تیری ___!!


اب فکر کیا کروں زمانے کی” دوست “
میں تو خود سے بھی بگھاڑ بیٹھا ہوں ___


زخم گھنگرُو پہن کے بیٹھے ہیں..!!
تیری یادوں کا رقص جاری ہے…!!!


مِرے جذبِ عشق کو کیا ہُوا، وہ کہاں گئی کَشِشِ وَفا
مجھے کوئی یاد کرے گا کیا ، جو تُمھیں کو یاد نہ آسکوُں __!!


کوئی موسم تو ایسا ہو
کہ جب بچھڑے ہوؤں کی یاد کے جگنو
چمک کھو دیں ۔۔۔
کسی کے ہجر میں رونے سے پہلے ہی
میری آنکھیں ۔۔۔ کبھی سو دیں ۔۔۔
کوئی موسم تو ایسا ہو کہ جب سب پھول الفت کے
کسی اَنمٹ محبّت کے
میرے دل میں کھلیں
پر
ان میں وہ خوشبو نہ ہو باقی
“وہ خوشبو ، جو تمہارے قُرب میں مِحسوس ہوتی تھی “
کوئی موسم تو ایسا ہو
کہ دل کے زخم بھر جائں
اگر ایسا نہیں ہوتا
تو پھر کتنا ہی اچھا ہو کہ
ساری خواہشیں دل کی
وہ سارے خواب اور ارماں
یونہی گھُٹ گھُٹ کے مر جائں
مجھے آزاد کر جائں ۔۔۔
کو ئی موسم تو ایسا ہو کہ وہ موسم
تمہاری یاد کا موسم نا ہو ۔۔


ستم کا آشنا تھا وہ سبھی کے دل دکھا گیا
کہ شام غم تو کاٹ لی سحر ہوئی چلا گیا ___!!
شب خیر اللہ حافظ


مجھے تب بھی محبت تھی
مجھے اب بھی محبت ھے
تیرے قدموں کی آہٹ سے
تیری ھر مسکراہٹ سے
تیری یادوں کی خْوشبو سے
تیری آنکھوں کے جادو سے
تیری لکش اداوں سے
تیری قاتل جفاؤں سے
مجھے تب بھی محبت تھی
مجھے اب بھی محبت ھے
تیری راھوں میں رکنے سے
تیری پلکوں کے چھلکنے سے
تیری بےجا شکایت سے
تیری ھر ایک عادت سے
مجھے تب بھی محبت تھی
مجھے اب بھی محبت ھے


مرا اِک مشورہ ہے اِلتجا نئیں
تو میرے پاس سے اس وقت جا نئیں
کوئی دَم چَین پڑ جاتا مجھے بھی
مگر میں خُود سے دَم بھر کو جُدا نئیں
میں خُود سے کچھ بھی کیوں منوا رہا ہوں
میں یاں اپنی طرف بھیجا ہوا نئیں
پتا ہے جانے کس کا، نام میرا
مرا کوئی پتا، میرا پتا نئیں
سفر درپیش ہے اک بے مسافت
مسافت ہو تو کوئی فاصلہ نئیں
ذرا بھی مجھ سے تم غافل نہ رہیو
میں بے ہوشی میں بھی بے ماجرا نئیں
دُکھ اُس کے ہجر کا، اب کیا بتاؤں
کہ جس کا وصل بھی تو بے گلہ نئیں
ہیں اس قامت سوا بھی کتنے قامت
پر اِک حالت ہے جو اس کے سوا نئیں
محبت کچھ نہ تھی جُز بدحواسی
کہ وہ بندِ قبا، ہم سے کُھلا نئیں
وہ خُوشبو مجھ سے بچھڑی تھی یہ کہہ کر
منانا سب کو، پر اب روٹھنا نئیں ………!!


درد کی انتہا نہ سمجھاؤ~~~!!
درد بے انتہا بھی ہوتے ہیں __!!


آج دور دور تک نہیں تیرا نشاں کوئی
کیا اس جدائی کے لئیے اپنا بنایا تھا تو نے ___!!


لوگ کیا کہے گے یہ سوچنا چھوڑ دیں
آپ اپنی نیت سے جانچے جائے گے لوگوں کی سوچ سے نہیں.


رُخ بدلتا ہوں تو ۔۔۔۔۔۔۔ شہ رگ میں چبھن ہوتی ہے،
عشق بھی ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ جنگ کا میدان ہوا ہو جیسے !!


کیا کہوں قرب کی یہ کونسی منزل ہے جہاں
نہ میں دیتا ہوں تجھے وقت نہ تو مانگتا ہے ____!!


دنیا کے کسی لغت میں نہیں ملتے،،،،
وہ لفظ جوتیری آنکھوں سےادا ہوتے تھے …!!


درد کی ٹھیس بھی اٹھتی تھی، پر اتنی بھی، بھرپور کبھی
آج سے پہلے کب اترا تھا دل میں میرے گہرا چاند ……!!


نیند آئی نا رات بھر مجھ کو
خواب بیٹھے رہے قطاروں میں …


کبھی کسی کا جو ہوتا تھا انتظار ہمیں..
بڑا ہی شام و سحر کا حساب رکھتے تھے


دے کوئی طبیب آ کے ہمیں ایسی دوا بھی.
لذت بھی رہے درد کی، مل جائے شفا بھی ____!!


ہجر دی رات دا پچھلا پہر
ٹھنڈی ٹھار ہواتےمیں
کسے بےدید دی راه وچ رل گئے
ہنجوخواب وفا تےمیں


لوگ لکھتے ہیں بے وفائ کے دکھ
میں نے لکھے ہیں آشنائ کے دکھ..!


اگر ہوتا ہے اتفاق ، تو یہ کیوں نہیں ہوتا ؟
وہ راستہ بھولے ، اورمجھ تک چلا آئے؛


ہوا سرد سی….
چمکتا چاند________
روشن ستارے…
کیا فائدہ اِن سب کا..
تمہاری آنکھیں تو..
اُداس___________ہیں


میری چھوٹی سی اک دنیا تھی ،
اک شخص تھا میری دنیا میں ،
اسے رب سے مانگا تھا میں نے ،
میری دنیا ساری تھی اس میں ،


To be continued…